لاپتہ افراد – لیاقت علی

میرے کچھ دوست بیرون ملک جاتے ہوئے ترکی کے راستے لاپتہ ہو گئے جبکہ ایک دوست سمندر کے راستے پانی میں غرق ہوگئے جو غرق ہوئے ان کا فاتحہ پڑھ کر دل کا بوجھ ہلکا ہو چکے ہیں 
لیکن جو لاپتہ ہے ان کا غم روز کھائی جا رہی ہے گھر والے نہ جیتے ہیں نہ مرتے اب انہیں کون سمجھائے کہ یہ ماوں بہنوں بیٹیوں اور بچوں کیلئے بہت تکلیف دہ ہوتی یے جب ان کے پیارے لاپتہ ہو جاتے ہے 

ارے بھئی آپ کا بچہ کھو جائے تو آپ پریشان نہیں ہونگے ؟ آپ ریاست کا دروازہ نہیں کھٹکھٹائے نگے ۔ انہیں بازیاب کرانا منظر عام پر لانا تو ریاست کا کام ہے 
کراچی کے دھرنے کی حمایت میرا انسانی فریضہ ہے

Facebook Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.