نام نہاد مذہبی بد ذات مفاد پرست ہے – سید عادل شاہ

مذہبی اور مذہبی نما ادا کاروں میں یہی فرق ہے کہ اصل مذہبی الہی اصولوں پر عمل کرتے ہیں اور نام نہاد مذہبی مذہب کی آڑ میں کاروبار کرتا ہے ۔
انہی نام نہاد مذہبیوں کیوجہ سے ملحدین کو اصل دیندار مومنین کیخلاف بولنے کا موقع دیا ہے ۔
لیکن سوچنے کی بات ہے اگر مجھ سے کسی مذہبی یا مذہبی نما شخص نے نا انصافی بد قولی یا کم لطفی کی ہے کیا میں اس بد ذات مفاد پرست کی ذاتی عمل کو دین سے منسوب کر سکتا ہوں؟

بلکل نہیں بلکہ میرا ایمان دین پر اور پختہ ہو جاتا ہے اس ادا کار مذہبی نما شخص کے بد کردار بد اخلاق اور قبیح عمل کو دیکھ کر اپنے کردار پر اللہ کا شکر ادا کرنا چاہیئے کہ کم از کم ہم یا آپ ان نام نہاد مذہبی عناصر سے بہ درجہ ہا بہتر ہیں ۔

Facebook Comments